Select your Top Menu from wp menus

گجرات میں مندی سے دہشتایک کاروباری نے کی خودکشی

گجرات میں مندی سے دہشتایک کاروباری نے کی خودکشی

سورت10ستمبر: ملک میں اقتصادی بحران یعنی مندی سے پریشان ہو کر بڑے بڑے صنعت کار اپنے پلانٹ بند کرنے کے لیے مجبور ہو رہے ہیں۔ کچھ لوگوں کو سمجھ نہیں آ رہا ہے کہ آخر وہ کریں تو کیا کریں۔ گجرات کے سورت میں معاشی بدحالی سے پریشان ہو کر ایک بلڈر کے ذریعہ خودکشی کا معاملہ منظر عام پر آیا ہے۔ خودکشی کرنے والے بلڈر کا نام ہریش بھائی شام جی بھائی روانی ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ یہ بلڈر کاروبار میں آئی مندی سے پریشان تھا۔
ہریش بھائی سورت کے کامریج علاقے میں رہتے تھے۔ انھوں نے اپنے فارم ہاؤس میں پھانسی لگا کر خودکشی کی ہے۔ لوگوں نے بتایا کہ طویل مدت سے کاروبار میں آئی مندی کی وجہ سے بلڈر ہریش بھائی بہت پریشان تھے۔ خبروں کے مطابق ہریش نے اپنے پروجیکٹ کو پورا کرنے کے لیے پرائیویٹ فائنانسروں سے سود پر کروڑوں روپے لیے تھے۔ وہ فائنانسرس کا پیسہ لوٹا نہیں پا رہے تھے۔ بلڈر کی خودکشی کی خبر ملنے کے بعد پولس موقع پر پہنچ گئی ہے۔ فی الحال پولس نے کچھ بھی کہنے سے منع کر دیا ہے۔ پولس پورے معاملے کی جانچ کر رہی ہے۔
سرکاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ ایک سال میں جی ڈی پی شرح ترقی میں 25 فیصد کی گراوٹ آئی ہے۔ سال 19-2018 کی پہلی سہ ماہی میں جی ڈی پی شرح ترقی 8.1 فیصد تھی جو اس سال (20-2019) کی پہلی سہ ماہی میں گر کر 5.8 فیصد رہ گئی ہے۔ اس طرح ایک سال میں تقریباً 25 فیصد کی گراوٹ جی ڈی پی شرح ترقی میں رہی ہے۔ خبر رساں ایجنسی رائٹرس کے مطابق اس سال جنوری سے مارچ تک ہندوستان کی جی ڈی پی شرح تقی گزشتہ پانچ سال میں سب سے کم 5.8 فیصد رہی۔ معاشی بحران کے درمیان سبھی سیکٹر کا برا حال ہے۔ آٹو سیکٹر کا سب سے زیادہ برا حال ہے۔ عالم یہ ہے کہ آٹو سیکٹر کی کئی کمپنیاں کام بند کرنے کو مجبور ہیں۔

HTML Snippets Powered By : XYZScripts.com