Select your Top Menu from wp menus

سکھ شہری پر پولیس کے حملے کی تحقیقات کے لیے اقلیتی کمیشن نے تحقیقاتی کمیٹی کی تشکیل کی

سکھ شہری پر پولیس کے حملے کی تحقیقات کے لیے اقلیتی کمیشن نے تحقیقاتی کمیٹی کی تشکیل کی

نئی دہلی: مکھرجی نگر علاقے میں 16 جون کو ایک سکھ شہری اور اس کے لڑکے پر پولیس کے لوگوں کے حملے کی تحقیقات کے لیے دہلی اقلیتی کمیشن نے ایک پانچ ممبری تحقیقاتی کمیٹی کی تشکیل کی ہے۔

تابش سروش ایڈوکیٹ اس کمیٹی کے صدر ہیں اور مادھوی شرما ایڈوکیٹ، ہرمیندر سکھ اہلووالیا (ممبر اقلیتی کمیشن سکھ مشاورتی کمیٹی)، صحافی گورپریت سنگھ بھوئی اور صحافی جسوندر سنگھ اس کمیٹی کے ممبران ہیں۔

اس کمیٹی کو یہ ذمہ داری دی گئی ہے کہ مسئلے کی تحقیقات کرے اور اس کے اصل سبب کو جاننے کی کوشش کرے، متاثرین اور چشم دید گواہوں کی گواہیاں جمع کرے، اس حادثے کے متعلق الیکٹرونک شہادتیں جمع کرے، متاثر شہری اور اس کے خاندان کو ہونے والے نقصانات کا اندازہ کرے، متاثر شہری کو مطلوبہ طبی امداد کے بارے میں سفارش کرے، متاثر شخص کو مطلوبہ معاوضہ تجویز کرے، فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے بارے میں تجویز پیش کرے اور مذکورہ حادثے سے ہونے والے نقصانات کا اندازہ لگائے۔

کمیٹی کو اپنا کام پورا کرنے کے لیے 30 دن  دیے گئے ہیں۔ کمیٹی کی رپورٹ آنے پر کمیشن اس کو میڈیا اور عوام کے سامنے رکھے گا اور دوسرے مطلوبہ اقدامات کے بارے میں غور کرے گا۔

HTML Snippets Powered By : XYZScripts.com