فوقانیہ اور مولوی کی کاپی جانچ کی تاریخ میں توسیع کا مطالبہ محب العلماء نے کیا ورچوئل نشست میں کورونا کائڈ لائن پر عمل کرنے کی بھی تنظیم کے وفد نے لیا حلف

0
سمستی پور (محمد مصطفیٰ) روز بروز کرونا وائرس جیسی سنگین وائرس میں اضافہ سے لوگ جہاں دہشت میں ہیں اور معمولات زندگی متاثر ہے وہیں اس سنگین حالات میں بہار اسٹیٹ مدرسے ایجوکیشن بورڈ کے چیئرمین کے ذریعہ فوقانیہ و مولوی کی کاپی جانچ کے لئے لیٹر جاری کرنا اور 20 جنوری 2022 تک اپنے اپنے سینٹر پر پہنچے کی ہدایت کر کے وہاں بھیڑ بھاڑ جمع کرنا افسوسناک ہے،یہ باتیں تنظیم محب العلماء سمستی پور کے کارکنان ورچوئل مٹنگ میں کہیں،ورچوئل نشست سے خطاب کرتے ہوئے تنظیم محب العلماء سمستی پور کے وفد نے کہا کہ بہار میں  کورونا اپنی تیسری لہرکے پرکوپھیلا چکا ہے جسکی وجہ سے بعض علاقہ میں بلکہ خود اپنے صوبہ بہار میں رات کا لاک ڈاؤن نافذالعمل ہے، ابتدائی کلاس کے اسکول ومدارس کے طلبا کی چھٹی کردی گئی ،سرکار کی جانب سے گائڈ لائن جاری کردیاگیاہے،بڑی تعداد میں بھیڑبھاڑکرنے سے منع کردیاگیا ہے،درجہ وسطانیہ کے امتحان کو ملتوی کردیاگیا، ماسک کولازم قراردیاگیاہے تاکہ یہ لہر متعدی نہ بنے لیکن پھر بھی اس روزبروز اضافہ ہورہاہے,اسی درمیان یہ اعلان  بھی کردیاگیا ہے کہ اساتذہ کرام مدرسہ بورڈکے فوقانیہ ومولوی  کی کاپی چیک کرنے کیلئے ۲۰/۱/۲۲ کوسینٹر پرپہنچ جائیں جو افسوسناک ہے، اس لئےتنظیم محب العلماء کے کارکنان بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار اور تعلیمی وزیر وجے کمار چودھری سے مطالبہ کرتا ہے کہ اس تاریخ کو مؤخر فرماکراس لہر میں کمی کے بعد نئی تاریخ کا اعلان کریں،اسلئے کہ  سینٹرپر بھیڑ ہوگی جسکی وجہ سے اس لہر میں اضافہ ہونے کا خدشہ ہے،ورچوئل نشست میں تنظیم کے صدر مولانا بدیع الزماں ضیائی۔سکریٹری مولانا سعید الرحمن ۔خازن مولانا محمد اکبر خان، مولانا ممتاز ندوی۔ مولانا عبداللہ صدیقی، مولانا محمد اسرار عالم ندوی۔ مولانا جاوید اختر قاسمی۔  حافظ نظرالمنان لطیفی۔ حافظ مراد۔قاری برکت اللہ اشاعتی،وغیرہ موجود تھے

Leave A Reply

Your email address will not be published.