سورہ والضحی کیا ہے ہم سے سنو: آئینہ آئینے پر فدا ہو گیا کاظم رضا کے دولت کدہ پردعائیہ تقریب و نعتیہ مشاعرہ کا انعقاد

0
پٹنہ(پریس اعلانیہ)بزم ادب کے جنرل سیکرٹری وارث اسلامپوری اور جوائنٹ سیکرٹری اقبال احمد نے پریس اعلانیہ جاری کرکے بتایا کہ معروف شاعرکاظم رضا کے دولتکدہ  سکٹر ڈی، اسٹریٹ نمبر 11 نیو عظیم آباد کالونی پٹنہ 6 میں بزم ادب پٹنہ کے زیر اہتمام  شاندار دعائیہ تقریب ونعتیہ مشاعرہ کا انعقادکیا گیا،جہاں کثیر تعداد میں علمائے کرام ،شعراء، ادباء کے علاوہ شہرکی کئی معزز ہستیاں موجود تھیں۔ اس موقع پرصدر مفتی ادارہ شرعیہ سلطان گنج پٹنہ علامہ مفتی حسن رضا نوری کی قیادت میں مفتیان کرام کا ایک نورانی قافلہ بڑے تزک و احتشام کے ساتھ اس دعائیہ تقریب و نعتیہ مشاعرہ میں آخری وقت تک موجودرہا۔ دعا خانقاہ درگاہ شاہ ارزانی کے صاحب سجادہ ڈاکٹر پروفیسر سید شاہ حسین احمد نے فرمائی۔ اس نعتیہ مشاعرہ کی صدارت ناشاد اورنگ آبادی نے فرمائی اور کامران غنی صبا نے نظامت کا فریضہ انجام دیا۔ جن شعرائے کرام نے شرکت فرمائی ان کا کلام بطورنمونہ پیش خدمت ہے:
ناشاد اورنگ آبادی:
خلاصہ ہے یہی ناشاد ختم المرسلین جیسا
ازل کے روز سے اب تک نظر کوئی نہیں آیا
معین کوثر:
اس جہان رنگ وبو کی ہر تمنا چھوڑ کر
آرہا ہوں تیری جانب تیری دنیا چھوڑ کر
مرغوب اثر فاطمی:
پوچھو نہ مہر لطف سے کیاکیا ہمیں ملا
تاریکیوں میں نور کا چشمہ ہمیں ملا
نیاز نذرفاطمی:
محدود کردی ہم نے درودوسلام تک
وہ راہ جو نکلتی تھی کردار کی طرف
افتخار عاکف:
تقدیر چمک جائے جوآقاکی نظر ہو
شب گزرے حرم میں تو مدینے میں سحر ہو
کاظم رضا:
لبوں پہ ہے صل علی بھاگ جاؤ
بلاؤ      بلاؤ        بلاؤ     بلاؤ
سیدضیاالرحمان ضیاء:
رسائی مصطفیٰ کی کیا بتائیں ہم کہاں تک ہے
سمجھ لیجیے بس اتنا ہی مکاں سے لامکاں تک ہے
پیکر رضوی:
در پاک سرور کی حرمت بڑی ہے
بشر کیا فرشتوں کی ٹولی جھکی ہے
احمد شاذقادری:
یہ دیار نبی ہے شاذ یہاں
سانس بھی لینا تو قرینے سے
وارث اسلامپوری:
حیات اپنی محمد کے نام ہو جائے
یہ عمر عشق نبی میں تمام ہو جائے
نصرالدین بلخی:
ہرآیت قرآں کو،بس نعت نبی کہیے
تم خلق سراپا میں،قرآں کی شہادت ہو
ڈاکٹر نصرعالم نصر:
سب پہ جاری ہے مرے پیارے نبی کا فیصلہ
پھر کہاں لازم ہے مجھ پہ ہر کسی کا فیصلہ
کامران غنی صبا:
سورہ والضحی کیا ہے ہم سے سنو
آئینہ آئینے پر فدا ہو گیا
ثناء اللہ ثنا دوگھروی:
ہے شان عالی مثالی نبی کی سیرت
ہر ایک نقش پا نشان جنت ہے
نظر الاسلام ندوی:
اے اہل زمانہ آؤ ادھر اور نعت شہہ ابرار سنو
اس رحمت عالم کا لوگو کیا اعلی ہے کردار سنو
معین گریڈیہوی:
لیکے حلیمہ دائی اللہ کے نور کو
آمنہ کے للنا پیارے حضور کو
لگا کے سینے اپنے، لوری سناوے
سانجھے بیہنواں،
جھلاوے خوب جھلنواں
     اس موقع پر میر سجاد،کمیل رضا قادری، اقبال احمد سمیت کثیر تعداد میں عاشقان مصطفی تقریب میں موجود تھے۔ مشاعرہ تقریباً دو بجے دن سلام و دعا کے ساتھ اختتام پذیر ہوا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.