مذہبی منافرت سے ہر طرف خوف کا ماحول؛:عمران پرتاپ گڑھی

0

نئی دہلی (پریس ریلیز)
ملک میں جس طرح مذہبی منافرت کو فروغ دیا جا رہا ہے ہر طرف خوف و دہشت کا ماحول بنایا جا رہا ہے،سرکاری مشینری کا غلط استعمال ہو رہا ہے ایسا ماحول ملک میں پہلے کبھی نہیں دیکھا گیا۔ان خیالات کا اظہار آل انڈیا شعبہء اقلیت کے قومی چیئرمین عمران پرتاپ گڑھی نے معروف و مشہور اسلامی اسکالر مولانا کلیم صدیقی کی اچانک گرفتاری پر ایک پریس نوٹ جاری کرتے ہوئے کیا۔عمران پرتاپ گرھی نے کہا کہ جس طرح لکھنؤ اتر پردیش اے ٹی ایس نے بغیر کسی نوٹس و ایف آئی آر کے میرٹھ مظفر نگر روڈ کے بیچ مولانا کلیم صدیقی کو ڈرامائی انداز میں گرفتار کیا ہے اس کی میں سخت لفظوں میں مزمت کرتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ مولانا کلیم صدیقی کی گرفتاری ایک منظم سازش کے تحت کی گئی ہے کیوں کہ یو پی میں اگلے سال الیکشن ہے بی جے پی ماحول کو پرپگندہ کرنے، پر امن فضا کو خراب کرنے اور ہندو مسلم بھائی چارے کو ختم کرنے کی غرض سے اس طرح کے منصوبے بنا رہی ہے تاکہ ہندو مسلم میں نفرت کا زہر گھولا جا سکے اور سیاسی راہ ہموار کی جا سکے۔انہوں نے کہا کہ مظفر نگر میں کسان آندولن اپنے شباب پر ہے جسے ہندو مسلمان دونوں مل کر چلا رہے ہیں اس لئے بی جے پی اس علاقے میں فرقہ وارانہ فساد کرانا چاہتی ہے اسی لئے مذہبی پیشواؤں کو نشانا بنا رہی ہے تاکہ وہ الیکشن میں اس کا بھر پور فائدہ اٹھا سکے۔عمران پرتاپ گڑھی نے کہا کہ پچھلے دنوں آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت نے بھی مولانا کلیم صدیقی کو اپنے ایک پروگرام میں دعوت نامہ دے کر بلایا تھا کیوں کہ مولانا نے ہمیشہ پیار و محبت کا پیغام دیا ہے اور ہندو مسل بھائی چارے کے فروغ کی بات کی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ معاملہ کورٹ میں چلا گیا ہے اور انشاء اللہ دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہو جائے گیا اور ساری حقیقت سامنے آجائے گی۔مولانا کلیم صدیقی کی گترتاری سے بات تو صاف طور پر ظاہر ہو گئی ہے کہ اترپردیش کی بی جے پی سرکار مغربی اتر پردیش میں چل رہے کسان آندولن سے بہت خوف زدہ ہے اور مغربی اتر پردیش میں مظفر نگر میں ہندو مسلم یکجہتی کی مشال کانگریس نے جو جلا رکھی ہے اس سے یوگی سرکار بوکھلا گئی ہے اس لئے یوگی کی بی جے پی سرکار ہندو مسلم بھائی چارے کو ختم کرنے کے لئے طرح طرح کے بے بنیاد منصوبے بنا رہی ہے۔انہون نے کہا کہ بی جے پی سرکار سرکاری اجینسیوں کا غلط استعمال کرکے اور فرضی معاملے کھڑے کرکے سماج کے تانے بانے کو برباد کرنے پہ تلی ہوئی ہے۔عمران پرتاپ گڑھی نے کہا کہ بی جے پی کے لیڈران کو جب یہ احساس ہوتا ہے کہ ہندو مسلم طبقہ کے لوگ قومی یکجہتی کی راہ پر گامزن ہیں اور سماج میں آپسی بھائی چارے کو فروغ دے رہے ہیں یا دونوں سماج کے لوگوں میں پیار محبت بڑھ رہا ہے توان میں نفرت پھیلانے اور بھائی چارے کو ختم کرنے کے لئے اس طرح کے اسکینڈل تیار کرتی ہے جس سے الیکشن میں بی جے پی اس کا فائدہ اٹھا سکے اور ملک میں ہندو مسلم ذات برادری و نفرت کی سیاست کر کے دونوں طبقہ کے لوگوں کو آسانی سے تقسیم کر سکے اور ہمارے ملک کی بھولی بھالی جنتا آپس میں لڑتی رہے۔عمران پرتاپ گڑھی نے کہا کہ مولانا کیم صدیقی صاحب اس ملک کے بہت بڑے عالم دین ہیں اور انہوں نے ہمیشہ ملک کو جوڑنے کی بات کی ہے آپسی بھائی چارے کا پیغام عام کیا ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.