مصیبت زدہ کی دلجوئی کرنا بھی صدقہ ہے

0

    کلیانپور سمستی پور(بہار)
مصیبت میں مبتلا لوگوں کی مدد کرنا ہمارا دینی و اخلاقی فریضہ ہے،کیونکہ انسان کی بعثت کا مقصد اپنوں کی دلجوئی اور غمخواری بھی ہے،جیسا کہ فرمان نبوی ہے کہ "جو شخص کسی انسان کی دنیاوی تکلیفوں میں سے کوئی تکلیف دور کرے گا اللہ تعالیٰ قیامت کے دن اس کی تکلیف دور کر دے گا اور مدد کرنے والے کے متعلق ارشاد خداوندی ہے کہ”جو شخص اللہ کے راستے میں اپنا مال خرچ کرتے ہیں اس کی مثال ایسی ہے کہ اس نے ایک دانہ زمین میں بویا پھر اس سے سات بالیاں اگیں اور ہر بالی میں سو دانے ہیں، اور اللہ جس کیلئے چاہتا ہے اور بڑھا دیتا ہے، اور اللہ بڑی وسعت والا اور جاننے والا ہے” ۔ انہی ارشادات کی بناء پر جناب قاری ممتاز احمد جامعی ،جنرل سکریٹری "الامداد ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر ٹرسٹ” ،ناظم و بانی "جامعہ اشاعت العلوم سمستی پور” نے اپنے مخلص و معاون اہل خیر حضرات سے تعاون حاصل کرنے کے بعد اپنے معتبر کارکنان (جناب ماسٹر محمد امتیازصاحب ،نائب ناظم جامعہ ہذا،مولانا محبوب عالم صاحب قاسمی صدر مدرس جامعہ ہذا اور حافظ ارشد صاحب ، استاذ جامعہ ہذا) کی سہ رکنی ٹیم کو سیلاب سے متاثرہ علاقے کا جائزہ لینے کے لئے بھیجا بعد ازاں سیلاب اور دیگر پریشانیوں سے جوجھ رہے جٹمل پور کے تقریباً ٣٦ گھروں میں ،منکولی کے ١٦ گھروں میں اور آنکھو پور کے١٨  گھروں میں پانچ کیلو چاول، دو کیلو دال، ایک لیٹر تیل اور ایک کیلو نمک کا کٹ تقسیم کیا ، یہ حقیقت ہے کہ اس امداد سے نہ ان کے نقصان کی تلافی ممکن ہے اور نہ ہی لمبے عرصے کے لیے راحت کا سامان ہے لیکن لوگوں کی دلجوئی کے لئے چھوٹی سی کاوش اور خندہ پیشانی سے ملنا بھی صدقہ ہے، الحمدللہ اب سیلاب کا پانی گاؤں سے اتر چکا ہے اور لوگ راحت محسوس کر رہے ہیں۔
اللہ سے دعا ہے کہ ادارہ یونہی پھلتا پھولتا رہے اور معاونین کے لیے صدقہ جاریہ کا سامان ہو۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.