اخلاص کی بنیاد پرلگایاہواباغ،تاقیامت باقی رہے گا: مولانامحمدناظم مہتمم جامعہ

0 34
جامعہ مدنیہ کے تمام امور معمول پر ہیں:مرغوب الرحمن صدمدرس جامعہ
کروناوائرس ایک بیماری ہے،اور بیماری کے بارے میں ایک مسلمان کاعقیدہ ہے کہ کوئی بھی بیماری اللہ کی اجازت کے بغیر نہیں آسکتی ہے۔ انہوں نے کہا:ہاں طاعون جیسی بیماری کے بارے میں اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے حکم دیاہے کہ جہاں یہ مرض ہووہاں نہیں جاسکتے،اور وہاں موجودہیں تو وہاں سے بھاگ نہیں سکتے،انہوں نے بہت زور دے کرکہا کہ: ایک مسلمان کاعقیدہ ہوناچاہئے کہ موت وحیات اللہ کے ہاتھ میں ہے، اگر موت لکھی ہوتو کوئی زندگی نہیں دے سکتا،اور اگر زندگی ہوتو کوئی موت نہیں دے سکتاہے،ہاں البتہ بیماری سے احتیاط برتنی چاہئے، اور جس احتیاط کی بات آج لوگ کرتے ہیں اسلام نے آج سے ساڑھے چودہ سوسال پہلے اس کی تعلیم دی ہے،مثال کے طورپر ایک کتاہے،اگر کتانے کسی برتن میں منہ ڈال دیاتو اسلام میں حکم ہے کہ اس کوسات مرتبہ دھویا جائے،اور پہلی مرتبہ مٹی سے،آج کی جدیدسائنس نے اس غورکیاتو سمجھ میں آیاکہ کتاکے لعاب میں ایساخطرناک جراثیم ہے،کہ کسی بھی کیمیل سے اس کو ختم نہیں کیاجاسکتاہے،اسی طرح خنزیرکے گوشت کودیکھ لیجئے،اللہ نے اسے پیداکیا،لیکن اس کے گوشت کوحرام قراردیاہے،آج کاجدیدسائنس کہتاہے کہ سورمیں تیس زہریلے جراثیم ہوتے ہیں،اس کے پاؤں میں ایک سوراخ ہوتا ہے جس سے باہر کے جراثیم اندر جاتے رہتے ہیں اور یہ مزید زہرآلود ہوجاتا ہے۔یہاں تک کہ اگر سانپ اس کوکاٹ لیاتو سانپ مرجاتاہے،اب جولوگ کتا،خنزیراور اس طرح کے جانورکھائیں گے تو یقیناوائرس ان کے جسم میں پھیلے گا،واضح رہے کہ جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ ایک دینی ملی،تعلیمی اورمرکزی ادارہ ہے،بانی جامعہ مدنیہ حضرت مولانامحمدقاسم صآحبؒ کی حیات میں جامعہ کے اہتمام وانتظام کوسنبھالنے والے جناب مولانامحمد ناظم صاحب مہتمم جامعہ کے اہتمام،نظامت اوراور جناب مولانامرغوب الرحمن صاحب صدرمدرس جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ کی نگرانی میں،جامعہ ترقی کی راہ پر گامزن ہے،کچھ لوگ جامعہ مدنیہ کے حوالہ سے افواہ پھیلارہے ہیں،مہتمم جامعہ مدنیہ نے اپنے خطاب میں اس کی تردید کی،اورکہا:جامعہ ایک خودمختارادارہ ہے،کچھ لوگ اپنی شرارت کی وجہ سے اس اس ادارہ کوبندکراناچاہتے ہیں،لیکن ان شاء اللہ انہیں کامیابی نہیں ملے گی۔ انہوں نے اپنے جاری خطاب میں کہا:جامعہ مدنیہ کی تعمیرخلوص کی بنیادپر ہوئی ہے،اور خلوص پر لگایاباغ تاقیامت باقی رہے گا،انہوں نے اس موقع پر طلبہ سے پوچھا،مجھے بتاو،حضرت مولانامحمدقاسمؒ کے زمانہ میں کھانے،پینے اور دوسری چیزوں کاجونظام تھا،کیااس میں کوئی کمی آئی ہے،طلبہ نے اقرارکیاکہ الحمدللہ کمی نہیں آئی ہے، آج  کے اس پروگرام میں جامعہ عربیہ نیابھوجپورکے مہتمم اورمشہور عالم دین مولانامحمدہاشم الرشیدی بھوجپوی صاحب بھی شریک ہوئے،دوطالب علم کے حفظ قرآن مکمل ہونے پرمختصر خطاب بھی کیا،اورجناب مولانامحمدناظم صاحب کے اہتمام میں جامعہ کی تعمیر وترقی کودیکھ کرخوشی کااظہارکرتے ہوئے اطمینان کابھی اظہارکیا،جناب مولانامرغوب الرحمن صاحب صدرمدرس جامعہ نے دعاسے قبل فرمایا:جامعہ کے تمام اپنے معمول کے مطابق ہیں،جناب مولانامحمدناظم صاحب اس کے مہتمم ہیں،اور ان کے اہتمام میں جامعہ ترقی کی راہ پر گامزن ہے،مولانامرغوب الرحمن صاحب کی دعاء پر مجلس اختتام کوپہونچی۔ 
یہ اطلاع شعبہ نشرواشاعت  کے ذمہ دار اور جامعہ مدنیہ کے میڈیاانچارج مفتی خالدانورپورنوی نے دی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.